Introduction to Databases in Urdu

(Last Updated On: July 10, 2016)

Introduction to Databases in Urdu

ڈیٹا بیسز کی تاریخ بھی اُتنی ہی پرانی ہے جتنی امریکہ میں ہونے والی پہلی پبلک کال کی ہے۔شاید ڈیٹابیسز کو اُس وقت اتنی اہمیت نہ دی گئی جتنی آج دی جاتی ہے، تاہم پاکستان دُنیا کا واحد ملک ہے جس میں سال 2016 شروع ہونے کے باوجود ابھی بھی اس کو اہمیت نہیں دی گئی۔حالانکہ اس وقت ڈیٹا بیس سسٹم سافٹ وئیر انجنیئرننگ کا اہم جزو بن چُکا ہے۔اور بڑی بڑی کارپوریشنز اور گورنمنٹ ادارے بھی اس کو استعمال کرنے پر مجبور ہیں۔اور دنیا میں تقریباً  ساٹھ بلین ڈالرز کی مالیت کی انڈسٹری ڈیٹا بیسز کے سر پر پھل پھول رہی ہے۔اور اس وقت ڈیٹا بیسز کے ایسے سسٹم تیار ہو چکے ہیں جو کہ نہ صرف طاقتور ہیں بلکہ آسان فہم ہیں۔اس خوبی نے ڈیٹا بیسز کو مختلف قسم کے یوزرز کو استعمال کرنے پر مجبورکردیا ہے۔اور اس عمل میں نئے لوگوں کو کسی قسم کے خاص علم کی بھی ضرورت نہیں ہے۔تاہم نئے لوگوں کو اس میں مہارت سے پہلے کسی بھی کمرشل یا کسی بھی ڈیٹا بیس میں پنگا نہیں لینا چاہیے کیونکہ اس عمل میں چھوٹی سی غلطی سارے اگلی پچھلی محنت پر پانی پھیرسکتی ہے۔

بہت سے لوگ آج بھی یہ سوال کرتے پھرتے نظر آتے ہیں کہ ڈیٹا بیسز میں اتنی جدت کیوں آ گئی ہے۔شاید اس کی وجہ، ہارڈوئیر، انٹرنیٹ، مواصلاتی ذرائع، الیکٹرانک کامرس، بزنس انٹیلیجنس، موبائل ٹیکنالوجی ، سافٹوئیرز میں بہتری اور شاید مصنوعی ذہانت بھی ہے۔اب تو ڈیٹا بیسز اتنی ترقی اور پیچیدہ ہوچکی ہیں کہ اب ان میں سرچ انجنز کی طرح بہت سے الگورتھمز کام کررہے ہیں۔

ڈیٹابیسز اس حد تک ہر فیلڈ میں پھیل چکی ہیں کہ ہمیں آج بھی یہ معلوم نہیں ہوسکا کہ ہم نے آخری بار جو پروگرام استعمال کیا تھا ، نہ جانے اس میں کتنی ڈیٹا بیسز کارفرما ہوں۔اس ساری بحث کے بعد ہم ڈیٹا بیس کے بارے میں بنیادی معلومات کو ذہن نشین کرنے کے قابل ہوچکے ہیں۔

ڈیٹا بیس:

ڈیٹا بیس کسی بھی متعلقہ ڈیٹا کے مجموعے کو کہتے ہیں۔

ڈیٹا بیس منیجمنٹ سسٹم:

ایسے سسٹم کو کہتے ہیں جو کہ ڈیٹابیس تک رسائی اور اس پر آپریشنز کو کنٹرول کرتا ہے۔

ڈیٹا بیس اپلیکیشن:

ایسی   اپلیکیشن یا پروگرام جس کےکسی حصے میں ڈیٹا بیس کارفرما ہوتی ہے۔

عموماً ہم جب کسی سُپر مارکیٹ سے کوئی چیز خریدتے ہیں تو اس وقت ڈیٹا بیس استعمال ہورہی ہوتی ہے۔اس عمل میں اسسٹنٹ بار کوڈ ریڈر سے بارکوڈ کو سکین کرتا ہے جوکہ ایسی اپلیکیشن سے جڑا ہوتا ہے جو کہ پراڈکٹس کی ڈیٹا بیس سے منسلک ہوتا ہے۔وہ اپلیکیشن فوراً ڈیٹا بیس کے سٹاک والے ٹیبل سے ایک پراڈکٹ کا ریٹ چیک کرتی ہے اور خریداری کنفرم ہوتے ہی سٹاک سے ایک پراڈکٹ کو نفی کردیتی ہے۔جدید ڈیٹا بیس سسٹم میں آج کل ایک خودکار سسٹم لگا ہوتا ہے ، جیسے ہی سٹاک ایک مقررہ حد سے کم ہوتا ہے، وہ فٹا فٹ آرڈر کردیتی ہیں جس کا طریقہ ہم مستقبل قریب میں آپ کو بتائیں گے۔اس وقت بتانے  سے آپ کی دلچسپی متاثر ہونےکا اندیشہ ہے۔

بالکل اسی طرح جب آپ کریڈٹ کارڈ یا ڈیبٹ کارڈ کے ذریعے کہیں ٹرانزیکشن کرتے ہیں تو  جیسے ہی آپ کارڈ مشین میں ڈالتے ہیں تو اسی وقت مشین سب سے پہلے آپ کے کریڈٹ کارڈ سے متعلقہ ڈیٹا بیس میں بیلنس چیک کرتی ہے جو کہ کافی ہونے پر ٹرانزیکشن کرتی ہے اور آپ کی ٹرانزیکشن کو متعلقہ ڈیٹا بیس میں شامل کردیتی ہے۔اسی طرح ایک ڈیٹا بیس کا کام یہی ہوتا ہے کہ وہ ٹرانزیکشن سے پہلے آپ کے کوائف کی تصدیق کرتی ہے اور اس کے علاوہ یہ بھی چیک کرتی ہے کہ آیا آپ کا کارڈچوری یا گم تو نہیں ہوا۔ اس کے علاوہ آپ میں اکثر لوگوں کو ایس ایم ایس الرٹس اور ای میل الرٹس موصول ہوتی ہیں جسے کےلئے ایک الگ ڈیٹا بیس کام کررہی ہوتی ہے۔

کبھی کبھار ہمیں ہوٹل میں یا کسی جہاز میں کوئی بکنگ کرانی ہوتی ہے تو ہم ہوٹل یا ٹریول ایجنسی کا رُخ کرتے ہیں جو کہ فٹافٹ چند بٹن دبا کر ہمارا کام آسان کردیتا ہے۔ حالانکہ اس عمل میں کمپیوٹر سوفٹوئیر کے بیک گراؤنڈ میں ایک ڈیٹا بیس کام کررہی ہوتی ہے جو اس بات کی تصدیق کرتی ہے کہ کوئی سیٹ یا کمرہ خالی ہے او رجیسے ہی ریزرویشن ہوتی ہے تو اسی وقت ڈیٹا بیس میں اس کمرے یا سیٹ کی نوعیت یا کیفیت میں تبدیلی واقع ہو جاتی ہے اور ریزرویشن کے عرصے کے دوران دوسرے ایجنٹس اس کمرے یا سیٹ کی ریزرویشن نہیں کرسکتے ہیں۔

اسی طرح اگر آپ کا جانا کسی جدید لائبریری میں ہو جو آج کل کے دنوں میں کافی مشکل نظر آتا ہے تاہم کاپی رائٹس آپ کو یہ عمل کرنے پر مجبورکرسکتے ہیں، تو اس لائبریری میں ڈیٹا بیسز کام کررہی ہوتی ہیں جن میں کتابوں، ان کی کیٹیگری، مصنفین ، قارئین اور ادھار کی معلومات ہونگی۔اس کے علاوہ کمپیوٹر میں ایک انڈیکس ہوتا ہے جس میں فلٹرز کی مدد سے آپ بآسانی اپنی مطلوبہ کتاب تلاش کرسکتے ہیں۔اسی ڈیٹا بیس کا ایک موڈیول ریزرویشن کو ڈیل کررہا ہوتا ہے۔جو کہ قارئین کو اس وقت مطلع کرتا ہے جب قارئین کی متعلقہ کتاب لائبریری میں موجود ہوتی ہے۔اس کے علاوہ ان لوگوں کو یاددہانیاں بھی بھیجی جاتی ہیں جو کہ کتاب گھر لے جاکر خوابِ خرگوش کے مزے لے رہے ہوتے ہیں۔بار کوڈ ریڈرز نے کتابوں کی آمدورفت کو کافی حد تک آسان بنا دیا ہے۔

اس کے علاوہ بہت سی کمپنیز، سکولز، سٹورز اور انٹرنیٹ پر ڈیٹا بیس استعمال ہوتی ہیں جن کا ذکر ابھی کرنا ابھی قبل از وقت ہی ہوگا۔

 

Itsuper Tecnologies

Itsuper Technologies is Pakistan based IT institute that comes with great ideas in order to make awareness of modern world and green Technology

%d bloggers like this: